All posts by admin

ون ڈے رینکنگ: پاکستان کی8ویں پوزیشن برقرار

دبئی (آئی این پی)انٹر نیشنل کر کٹ کونسل (آئی سی سی ) نے تازہ ترین ون ڈے رینکنگ جاری کر دی ، جنوبی افریقا 123 پوائنٹس کےساتھ پہلے،آسٹریلیا دوسرے ، بھارت تیسرے اور 88 پوائنٹس کیساتھ پاکستان آٹھویں نمبر پر موجود ہے۔ابتدائی20بلے بازوں میں صرف 2 پاکستان بیٹسمین موجود ہیں بابر اعظم 8ویں اور محمد حفیظ20 ویں نمبر پر موجود ہیں ،اے بی ڈی ویلئیرز پہلے نمبر پر موجود ہیں ،باﺅلنگ رینکنگ میں ابتدائی 20 باﺅلرز میں کوئی پاکستانی موجود نہیں ہے ، پاکستانی نژاد جنوبی افریقی باﺅلر عمران طاہر پہلے نمبر پربراجمان ہیںآ ل راﺅنڈرز میں شکیب الحسن پہلے ،پاکستانی محمد حفیظ دوسرے اور افغانستان کے محمد نبی تیسرے نمبر پر موجود ہیں۔ آئی سی سی نے تازہ ون ڈے رینکنگ جاری کر دی ، جنوبی افریقا کی پہلی پوزیشن برقرار ہے ، پاکستانی ٹیم 88 پوائنٹس کے ساتھ آٹھویں نمبر پرہے۔آئی سی سی کی جانب سے جاری کی گئی رینکنگ کے مطابق جنوبی افریقا 123 پوائنٹس کے ساتھ پہلے نمبر پر براجمان ہے ، 118 پوائنٹس کے ساتھ ورلڈ چیمپئن آسٹریلیا دوسرے ، 117 پوائنٹس کے ساتھ بھارت تیسرے ، نیوزی لینڈ 116 پوائنٹس کے ساتھ چوتھے، انگلینڈ 110 پوائنٹس کے ساتھ پانچویں ، 93 پوائنٹس کے ساتھ سری لنکا چھٹے ، بنگلہ دیش 91 پوائنٹس کے ساتویں نمبر پر براجمان ہے۔پاکستان ٹیم رینکنگ میں 88پوائنٹس کے آٹھویں نمبر پر براجمان ہے ، ویسٹ انڈیز کی ٹیم کے 79 پوائنٹس کے ساتھ نویں اور افغانستان کی ٹیم 52 پوائنٹس کے ساتھ دسویں نمبر پر ہے۔رواں برس 30 ستمبر تک آئی سی سی رینکنگ کی ٹاپ آٹھ ٹیمیں ورلڈ کپ 2019 کےلئے کوالیفائی کریں گی۔دوسری طرف بلے بازوں کی ون ڈے رینکنگ میں ابتدائی20بلے بازوں میںصرف2پاکستان بیٹسمین موجود ہیں بابر اعظم 8ویں اور محمد حفیظ20ویں نمبر پر موجود ہیں جبکہ جنوبی افریقا کے اے بی ڈی ویلئیرز پہلے نمبر پر ہیں ، آسٹریلیا کے ڈیوڈ وارنر دوسرے ، بھارت کے ویرات کوہلی تیسرے نمبر پر ہیں۔ باﺅلنگ رینکنگ میں ابتدائی20باﺅلرز میں کوئی پاکستانی موجود نہیں ہے جبکہ پاکستانی نژاد جنوبی افریقی باﺅلر عمران طاہر پہلے ،مچل سٹارک دوسرے ،سنیل؛ نائرائن تیسرے اورکاگیسو ربدا چوتھے نمبر پر موجود ہیں۔آؒ ل راﺅنڈرز میں شکیب الحسن پہلے ،پاکستانی محمد حفیظ دوسرے اور افغانستان کے محمد نبی تیسرے نمبر پر موجود ہیں۔

ثانیہ پاک، بھارت میچ دیکھنے گراﺅنڈ میں نہیں آ ئیں گی

برمنگھم(آئی این پی) سابق کپتان شعیب ملک سے پوچھا گیا کہ کیا ثانیہ مرزا اپنے شوہر کو بھارت کے خلاف کھیلتا دیکھنے کیلئے میدان میں موجود ہوں گی؟۔انہوں نے جواب دیا کہ وہ ابھی برمنگھم نہیں آ سکیں گی کیونکہ وہ فرنچ اوپن ٹینس ٹورنامنٹ کھیل رہی ہوں گی۔واضح رہے کہ فرنچ اوپن ٹینس ٹورنامنٹ کا آغاز 28 مئی سے ہو گا جبکہ پاکستان اور بھارت کے درمیان میچ 4 جون کو ایجبسٹن کرکٹ گراﺅنڈ میں کھیلا جائے گا۔

بھارت مذاکرات کی میز پرآنے کو تیار

کراچی (نیوزایجنسیاں)بھارتی کرکٹ بورڈ نے پندرہ دن بعد پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے لیگل نوٹس کا باضابطہ جواب دے دیا، چیئرمین پی سی بی شہریار خان کا کہنا ہے کہ بھارتی کرکٹ بورڈ مذاکرات پر آمادہ ہوگیا ہے۔ پی سی بی چیئرمین شہریار خان کا کہنا ہے کہ بھارتی بورڈ نے نوٹس کا جواب دیتے ہوئے بات چیت کے ذریعے مسئلہ حل کرنے پر رضامندی ظاہر کردی۔ان کا کہنا تھا کہ تاہم اس سارے معاملے پر پی سی بی، انٹر نیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کو بات چیت کا حصہ بنانا چاہتا ہے۔۔چمپئنز ٹرافی میں پاک بھارت کرکٹ ٹیمیں تو چار جون کو برمنگھم میں مدمقابل ہوں گی جبکہ دونوں ممالک کے کرکٹ بورڈز بھی دو طرفہ سیریز کے معاملے پر آمنے سامنے ہیں۔یہ دعویٰ کیا جارہا ہے کہ پی سی بی کے ایک نوٹس نے بھارتی بورڈ کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کردیا۔پی سی بی چیئرمین شہریار خان نے میڈیاکو بتایا کہ بھارتی بورڈ نے نوٹس کا جواب دیتے ہوئے بات چیت کے ذریعے مسئلہ حل کرنے پر رضامندی ظاہر کردی ۔ خیال رہے کہ چیمپینز ٹرافی کے سلسلے میں آئی سی سی حکام ان دنوں لندن میں موجود ہیں، اس لیے میگا ایونٹ سے پہلے دونوں بورڈز کے درمیان دبئی میں بات چیت کے امکانات کم ہیں۔جون میں آئی سی سی کے اجلاس سے قبل دونوں بورڈز کے سربراہان لندن میں ملاقات کرکے دو طرفہ سیریز کے معاملے کو حل کرنے کی کوشش کرسکتے ہیں۔واضح رہے کہ 3 مئی 2017 کو پاکستان کرکٹ بورڈ نے معاہدے کی خلاف ورزی پر آئی سی سی کی تنازعات کے حل کیلئے قائم کمیٹی کے تحت ہندوستانی کرکٹ بورڈ کو نوٹس بھجواتے ہوئے 60 ملین ڈالر ادا کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔پی سی بی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا تھا کہ انڈیا نے فوچر ٹور پروگرام کے تحت 2014 سے 2013 کے درمیان سیریز کھیلنے کیلئے معاہدے کی یادداشت پر دستخط کیے تھے اور سیریز نہ کھیل کر ہندوستان نے معاہدے کی خلاف ورزی کی ہے۔پاکستان کرکٹ بورڈ نے ہندوستان نے سیریز نہ کھیلنے کی صورت میں ہونے والے نقصانات کا ہرجانہ ادا کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

عمرچمپئنزٹرافی سے آﺅٹ،انضمام نے تصدیق کردی

لاہور(سپورٹس رپورٹر) قومی کرکٹ ٹیم کے چیف سلیکٹر انضمام الحق نے تصدیق کی ہے کہ عمر اکمل فٹنس مسائل کے باعث چیمپئنز ٹرافی میں شریک نہیں ہوسکیں گے، حارث سہیل اور عمر امین سے کسی ایک کو عمر اکمل کی جگہ چیمپینز ٹرافی کیلئے بھیجا جائے گا۔لاہور میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے چیف سلیکٹر قومی ٹیم انضمام الحق کا کہنا تھا کہ عمر اکمل پاکستان کپ سے قبل فٹ تھے لیکن ٹیم مینجمنٹ ہر سیریز سے پہلے ہر کھلاڑی کا فٹنس ٹیسٹ لیتی ہے اور جب برمنگھم میں چیمپئنز ٹرافی کے لئے لگائے کیمپ میں عمراکمل کا 2 بار ٹیسٹ لیا گیا تو وہ دونوں بار فٹنس ٹیسٹ میں فیل ہوئے اس لیے انہیں انگلینڈ سے وطن واپس بھیجا جارہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ عمراکمل آسٹریلیا ٹور میں بھی فٹ نہیں تھے انہیں فٹنس پر توجہ دینا ہوگی۔انضمام الحق نے کہا کہ حارث سہیل اور عمر امین نے پاکستان کپ میں پرفارم کیا ہے ان کے نام سلیکشن کے لئے زیر غور ہیں اور ان دونوں کھلاڑیوں میں سے کسی ایک کو عمر اکمل کی جگہ چیمپینز ٹرافی کے لیے بھیجا جائے گا۔

امریکہ کا ”ایران“ بارے اہم اقدام کا اعلان

تل ابیب (مانیٹرنگ ڈیسک‘نیوز ایجنسیاں) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ اسرائیل اور فلسطین کے درمیان امن دیکھنے کا خواہش مند ہوں جب کہ دونوں ممالک کے درمیان تنازع کو حل کرنے اور خطے میں امن و استحکام لانے کا نادرموقع ہے۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنے پہلے غیر ملکی دورے میں سعودی عرب میں 2 دن گزارنے کے بعد اسرائیل پہنچے جہاں اسرائیلی صدر اور وزیراعظم نے تل ابیب ایئر پورٹ پر ان کا استقبال کیا۔ اس موقع پر ایئرپورٹ پر صحافیوں سے مختصر بات چیت کرتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ اسرائیل سے محبت ہے اوراس کا احترام کرتے ہیں، امریکا اور اسرائیل دونوں کو ایک ہی طرح کے مسائل درپیش ہیں اور ایران کو ایٹمی ہتھیار بنانے سے روکنے پر بھی دونوں ممالک کا ایک ہی موقف ہے جب کہ اسرائیل اور امریکا مل کر اپنے خواب پورے کریں گے۔ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ اسرائیل اور فلسطین کے درمیان امن دیکھنے کا خواہش مند ہوں جب کہ دونوں ممالک کے درمیان تنازع کو حل کرنے اور خطے میں امن اوراستحکام لانے کا نادرموقع ہے، ہم مل کرکام کریں گے تو ہی خطے میں خوشحالی، استحکام اورامن آئے گا۔ انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ امریکا اور اسرائیل ہم آہنگی اور پر امن طریقے سے مل کر چل سکتے ہیں کیوں کہ ہمیں مل کر ہی دہشت گردی کو شکست دینی ہے۔امریکی صدر نے کہا کہ وہ اس بات کو ترجیح دیں گے کہ اسرائیل اورفلسطین براہ راست مذاکرات کے ذریعے باہمی رضامندی سے تمام مسائل کو حل کریں کیوں کہ اس کے علاوہ کوئی دوسرا راستہ نہیں۔ دوسری جانب اسرائیلی وزیراعظم نے امریکی صدر کو خوش آمدید کہتے ہوئے کہا کہ ٹرمپ کا اسرائیل کا یہ تاریخی دورہ ہے۔ڈونلڈ ٹرمپ اپنے دورے میں اسرائیلی اور فلسطینی رہنماو¿ں سے بھی ملاقاتیں کریں گے جس میں وہ اسرائیل فلسطین تنازع کو ملکر کر حل کرنے پر زور دیں گے۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق امریکی صدرکے طیارے ایئرفورس ون نے کئی اسرائیلی جنگی طیاروں کی حفاظت میں بن گوریان ایئرپورٹ پر لینڈ کیا، ایئرپورٹ آمدپر ان کا پرتپاک استقبال کیا گیا، مہمان کی آمد کے موقع پر اسرائیلی وزیراعظم اپنی اہلیہ کے ہمراہ ائیرپورٹ پر موجودتھے جنہوں نے انتہائی گرمجوشی سے امریکی صدرکا ریڈ کارپٹ استقبال کیا اور اسرائیل آمد پر خوش آمدید کہا،ان کا دورہ کئی لحاظ سے تاریخی ہے جس میں یہ بات بھی شامل ہے کہ یہ پہلی باضابطہ پرواز تھی جو سعودی عرب سے اسرائیل آئی، ٹرمپ کے ساتھ 900 اہلکار اور 50 خصوصی گاڑیاں بھی آئی ہیں جن میں 14 لیموزین کاریں بھی شامل ہیں جبکہ امکان ہے کہ صدر ٹرمپ سفر کے لیے زیادہ ترہیلی کاپٹر ہی استعمال کریں گے۔ اپنے اس دورے کے دوران ٹرمپ کی کوشش ہو گی کہ تعطل کے شکار مشرق وسطیٰ امن مذاکرات کی بحالی ممکن بنائے جائے۔ امریکی سفارتی ذرائع کے مطابق اس دورے کے دوران ٹرمپ یروشلم کے علاوہ ویسٹ بینک بھی جائیں گے۔ وہ کئی اہم مقدس مذہبی مقامات کا دورہ کرنے کے علاوہ اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو سے بھی ملیں گے۔ بتایا گیا ہے کہ اس دوران وہ فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس سے بھی ملاقات کریں گے۔ ٹرمپ کی کوشش ہو گی کہ وہ اسرائیلی اور فلسطینی رہنماو¿ں کے ساتھ ملاقات میں اسرائیلی۔ فلسطینی تنازعے کے خاتمے کی خاطر مذاکرات کی بحالی ممکن بنا سکیں۔ ادھر اسرائیل کے شہر مقبوضہ بیت المقدس میں ٹرمپ کے دو روزہ دورے کے لیے انتہائی خاص انتظامات کیے گئے ہیں، ٹرمپ کنگ ڈیوڈ ہوٹل میں قیام کریں گے، جسے ایک قلعے میں بدل دیا گیا ہے۔ ٹرمپ ہوٹل کے جس سوٹ میں قیام کریں گے وہ بم اور راکٹ حملوں کے ساتھ ساتھ زہریلی گیس کے حملوں سے بھی محفوظ بنایا گیا ہے۔ امریکی صدرکے طیارے ایئرفورس ون نے کئی اسرائیلی جنگی طیاروں کی حفاظت میں بن گوریان ایئرپورٹ پر لینڈ کیا،ان کا دورہ کئی لحاظ سے تاریخی ہے جس میں یہ بات بھی شامل ہے کہ یہ پہلی باضابطہ پرواز تھی جو سعودی عرب سے اسرائیل آئی،ٹرمپ کے ساتھ 900 اہلکار اور 50 خصوصی گاڑیاں بھی آئی ہیں جن میں 14 لیموزین کاریں بھی شامل ہیںجبکہ امکان ہے کہ صدر ٹرمپ سفر کے لیے زیادہ ترہیلی کاپٹر ہی استعمال کریں گے۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اسرائیلی وزیراعظم بینجمن نتن یاہو سے کہا ہے کہ ایران کے پاس کبھی بھی جوہری ہتھیار نہیں ہوں گے۔انھوں نے اپنی رائے دیتے ہوئے کہا کہ سنہ 2015ءمیں دنیا کی طاقتوں کے ساتھ جوہری معاہدہ طے پانے کے بعد ایران سمجھتا ہے کہ وہ ’جو چاہے کر‘ سکتا ہے۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے پیر کو اسرائیل پہنچنے پر خطے میں امن اور استحکام قائم کرنے کے لیے ایک نادر موقعے کے بارے میں بات کی ہے۔تل ابیب کے ہوائی اڈے پر ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے مختصر بات چیت میں انھوں نے امریکہ اور اسرائیل کے اٹوٹ بندھن کا بھی ذکر کیا۔ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ ‘صدر کی حیثیت سے اپنے پہلے غیر ملکی دورے پر اس قدیم اور مقدس سرزمین پر امریکہ اور اسرائیل کی ریاست کے درمیان اٹوٹ رشتوں کا اعادہ کرنے آیا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے سامنے ایک انمول موقع ہے کہ ہم خطے اور یہاں کے لوگوں کے لیے امن اور استحکام بحال کریں، دہشت گردی کو شکست دیں اور خوشحالی، امن اور آشتی کا مستقبل یقینی بنائیں۔ لیکن یہ سب کچھ مشترکہ کوششیں سے حاصل کیا جاسکتا ہے اور اس کے لیے دوسرا کوئی اور راستہ نہیں۔

عمران خان کو عزت کا کوئی پتہ نہیں, اہم لیگی شخصیت کی کپتان پر تنقید

اسلام آباد (این این آئی) وزیرمملکت اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا کہ عدالت نے جے آئی ٹی رپورٹ پر اطمینان کا اظہار کیا ہے ،کچھ لوگوں کا مقصد اداروں اور عہدوں پر کیچڑ اچھالنا ہے،عمران خان کو کیا پتہ کہ عزت کیا چیز ہوتی ہے، وزیراعظم اپنی تین نسلوں کا جواب دے رہے ہیں، تحریک انصاف کا مقصد اداروں کے درمیان تصادم کرانا ہے ،عمران خان کرسیوں سے خطاب کر کے کس کو بے وقوف بنا رہے ہیں؟۔میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے وزیرمملکت اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا کہ عدالت نے جے آئی ٹی رپورٹ پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ جے آئی ٹی سے تمام ادارے اور وزیراعظم کا خاندا ن تعاون کر رہا ہے، انہوں نے کہا کہ عمران خان اور ان کی پارٹی دشمن کی زبان بولتی ہے، ڈان لیکس میں تحریک انصاف نے آئینی اداروں کے خلاف مہم چلائی، عمران کا مقصد جھوٹ اور الزام پر مبنی سیاست اور پاکستان کی ترقی کو روکنا ہے، انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کا مقصد اداروں کے درمیان تصادم کرانا ہے اگر انہوں نے سیاست کرنی ہے تو کارکردگی کی بنیاد پر سیاست کریں ، انہوں نے کہا کہ عمران کو ملکی ترقی ، سی پیک اور نوجوانوں کے مستقبل سے کوئی غرض نہیں ہے، مریم اورنگزیب نے کہا کہ جب عمران خان کے حساب کی بات آتی ہے تو 3سال سے پیچھے نہیں جاتے اب چیئرمین پی ٹی آئی سپریم کورٹ اور الیکشن کمیشن سے بھاگ رہے ہیں،انہوں نے کہا کہ عمران خان اور ان کے نمائندے صرف جھوٹ بولتے ہیں ،عوام ان کو نہیں سنتے، انہوں نے کہا کہ چیئرمین پی ٹی آئی کرسیوں سے خطاب کر کے کس کو بے وقوف بنا رہے ہیں؟۔حیاتیاتی تنوع کے مختلف پہلوو¿ں کے عالمی دن کے موقع پر تقریب منعقد ہوئی -تقریب کا موضوع ”حیاتیاتی تنوع کے مختلف پہلو اور پائیدار سیاحت “تھا -وزیر مملکت اطلاعات مریم اورنگزیب کا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حیاتی تنوع سے متعلق مختلف منصوبوں پر کام ہورہا ہے-ماحولیاتی تبدیلی سے متعلق وزارت کے تحت گلگت بلتستان میں بھی کام ہورہا ہے-ماحولیاتی تنوع اور سیاحت کا آپس میں گہرا تعلق ہے-گزشتہ 35سال میں دہشتگردی کی وجہ سے سیاحت کا شعبہ بری طرح متاثر ہوا-انہوں نے کہا کہ گزشتہ 4سال میں دہشتگردی میں کمی کی وجہ سے سیاحت کو فروغ ملا-سیاحت کا ملکی معیشت سے گہرا تعلق ہے‘پاکستان میں سیاحت،کھیل اور دیگر سرگرمیوں میں اضافہ ہورہا ہے-کھیلوں اور سیاحت کا قدرتی ماحول سے بھی تعلق ہے-موجودہ حکومت کے آنے کے بعد سیاحت میں اضافہ ہوا ہے-مریم اورنگزیب نے کہا کہ پاکستان قدرتی وسائل سے مالا مال ملک ہے-پاکستان میں تمام موسموں کی وجہ سے جنگلات کی بھی کئی اقسام موجود ہیں-حیاتیاتی تنوع اور سیاحت پر مختلف قسم کی ڈاکو منٹریز تیار کی گئی ہیں-حیاتیاتی تنوع جی ڈی پی کے اضافے میں اہم کردار ادا کرتا ہے-رواں برس سیاحت کے سال کے طور پر منایا جارہا ہے-ریڈیو اور ٹی وی پر سیاحت سے متعلق پروگرام نشر کیے جائینگے-آنیوالی نسلوں کیلئے پاکستانی ثقافت اور ورثے کو محفوظ بنانا ہوگا-نوجوان طلبہ اپنے صلاحیتوں کو اس شعبے میں بھی استعمال کرسکتے ہیں-وزیر اطلاعات نے کہا کہ 18ویں ترمیم کے بعد سیاحت کا شعبہ صوبوں کے پاس ہیں-صوبوں کو سیاحت کے فروغ کیلئے موثر کردار ادا کرنا ہوگا-ماحولیاتی تنوع میں تحقیق کیلئے پارلیمنٹ کا بھی اہم کردار ہے-پارلیمنٹ میں ترقیاتی اہداف کے حصول کیلئے سیکرٹریٹ قائم کیا گیا ہے-ماحولیاتی تنوع اور سیاحت کے شعبے میں انسانی وسائل کا ہونا ناگزیر ہے-نجی میڈیا روزانہ اپنی نشریات کا 10فیصد سماجی پیغامات نشر کرنے کا پابند ہے-

مسلم ممالک کے اتحاد بارے وزیراعظم کا بڑا اعلان, دیکھئے اہم خبر

ریاض، مدینہ منورہ(مانیٹرنگ ڈیسک، ایجنسیاں) وزیراعظم نواز شریف کا کہنا ہے کہ تمام ممالک کو چاہیئے کہ وہ دنیا سے دہشت گردی کے ناسور کو ختم کرنے کے لیئے مشترکہ جدوجہد کریں۔سعودی دارالحکومت ریاض میں عرب امریکا اسلامی سربراہی کانفرنس میں شرکت کے بعد مدینہ منورہ پہنچنے پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ریاض کانفرنس دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑنے کے سلسلے میں ایک اچھا قدم ہے اور اس کے اغراض و مقاصد مثبت ہیں جس کے باعث انتہا پسندی اور دہشت گردی کے خلاف اچھے نتائج سامنے آئیں گے لیکن اس کے لئے ضروری ہے کہ دنیا کے تمام ممالک دہشت گردی کے ناسور کو ختم کرنے لئے مشترکہ جدوجہد کریں۔وزیراعظم نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان نے عظیم قربانیاں دیں اور دہشت گرد حملوں کے باعث پاکستان کی معیشت کو اربوں ڈالرز کا نقصان اٹھانا پڑا۔ ان کا کہنا تھا کہ اسلامی سربراہی کانفرنس میں ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ بات چیت مثبت رہی اور ان سے غیررسمی گفتگو کے دوران دہشت گردی سے متعلق آگاہ کردیا تھا، صرف وقت کی کمی کے باعث تقریر کا موقع نہیں ملا کیوں کہ کانفرنس سوا گھنٹے تاخیر سے شروع ہوئی تھی۔نواز شریف کا کہنا تھا کہ افغانستان کو بھی چاہیے کہ وہ بھی دہشت گردوں کے خلاف موثر کارروائی کرے اور جس طرح مغربی ممالک دہشت گردوں کے خلاف متحد ہیں اسی طرح تمام مسلم ممالک کو دہشت گردی کے خلاف صف آرا ہونا چاہیے۔ وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف امریکا عرب اسلامک کانفرنس میں شرکت کے بعد مدینہ منورہ پہنچ گئے جہاں وہ روضہ رسول ? پر حاضری دیں گے۔ وزیر اعظم نواز شریف کی کل وطن واپسی ہو گی۔ مدینہ منورہ پہنچنے پر صحافیوں سے گفتگو میں وزیر اعظم بتایا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے بات چیت انتہائی مثبت رہی جبکہ دہشتگردی خلاف جنگ کے بارے میں بھی گفتگو ہوئی۔ وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ مسلم ممالک کا اتحاد خوش ا?ئند ہے۔ مغربی ممالک دہشتگردی کیخلاف صف ا?را ہو رہے ہیں، مسلم ا±مہ کو بھی متحد ہونا ہوگا۔ دہشتگردی کے خاتمے کے لئے سب کو مل کر کام کرنا ہوگا۔ ہم افغانستان سے بھی کہتے ہیں وہ بھی اپنی سر زمین پر دہشتگردوں کے خلاف کاروائی کرے۔صحافیوں سے گفتگو میں وزیر اعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ دہشتگردی سے سب سے زیادہ پاکستان متاثر ہوا۔ دہشتگردی کے باعث پاکستان کو 120 ارب سے زائد کا نقصان ہوا اور ہزاروں افراد دہشتگردی کا نشانہ بنے۔

پاکستان کیخلاف کسی ملک کی سرزمین کا استعمال برداشت نہیں, آرمی چیف کا دبنگ اعلان

راولپنڈی (آئی این پی) آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے واضح کیا ہے کہ پاکستان کی سرزمین کسی بھی ملک کیخلاف دہشتگردی کیلئے استعمال نہیں ہو رہی اور نہ ہی پاکستان کیخلاف کسی دوسرے ملک کی سرزمین کا استعمال برداشت نہیں کیا جائیگا۔ پیر کو پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے جی ایچ کیو میں ملاقات کی جس میں باہمی دلچسپی کے امور،خطے میں سیکورٹی کے معاملات پر تبادلہ خیا ل کیا گیا۔آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہاکہ پاکستان کی سرزمین کسی بھی ملک کیخلاف دہشتگردی کیلئے استعمال نہیں ہو رہی اور نہ ہی پاکستان کیخلاف کسی دوسرے ملک کی سرزمین کا استعمال بھی برداشت نہیں کیاجائیگا۔ امریکی سفیر نے دہشت گردی اور انتہاپسندی کے خاتمے کیلئے پاکستان کی قربانیوں کا اعتراف کیا ۔امریکی سفارت خانہ کی طرف سے یہاں جاری بیان کے مطابق امریکی سفیر نے پہلی امریکا عرب اسلامی سربراہ کانفرنس کے موقع پر امریکا کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ تقریر کا حوالہ دیا جس میں انہوں نے (صدرڈونلڈ ٹرمپ ) نے دہشت گردی اور انتہا پسندی پر فتح پانے کیلئے امن، سلامتی،خوشحالی اوراتحاد کا وژن دیا ہے۔ امریکی سفیر نے آرمی چیف قمر جاوید باجوہ کی جانب سے 18مئی کو عوامی سطح پر پاکستان کی سرزمین کو کسی بھی ملک پر حملوں کیلیئے استعمال نہ کرنے کے عزم پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ ملاقات کے دوران آرمی چیف جنرل قمر جایدباجوہ نے ایک مرتبہ پھر یقین دلایا کہ پاکستان کی سرزمین کو افغانستان کے خلاف منصوبہ بندی یا حملوں کیلئے استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی جائیں گی۔ ملاقات کے دوران آرمی چیف اورامریکی سفیر نے محفوظ، مستحکم اورخوشحال افغانستان کیلئے اپنے ممالک کے عزم کا اعادہ کیا۔

مانچسٹر میں کانسرٹ کے دوران زوردار دھماکہ, 19 افراد ہلاک

مانچسٹر(ویب ڈیسک) ارینا میں کانسرٹ کے دوران زوردار دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں 19 افراد ہلاک اور 50 سے زائد زخمی ہوگئے۔برطانوی میڈیا کے مطابق مانچسٹرارینا کے سٹی سینٹر میں امریکی گلوکارہ ا?ریانا گرانڈے کا کانسرٹ جاری تھا کہ اچانک زوردار دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں کانسرٹ میں موجود 19 افراد ہلاک اور 50 سے زائد زخمی ہو گئے تاہم زخمیوں کو اسپتال منتقل کردیا گیا ہے جبکہ دھماکے میں امریکی گلوکارہ ا?ریانا گرانڈے محفوظ رہیں۔دوسری جانب برطانوی حکام نے واقعے کو دہشتگردی قرار دیتے ہوئے مانچسٹر شہر میں ایمرجنسی نافذ کردی ہے اور سیکیورٹی ریڈ الرٹ بھی جاری کردیا گیا ہے۔ مانچسٹردھماکے کے بعد کنزرویٹو پارٹی نے اپنی الیکشن مہم معطل کر دی جب کہ برطانوی وزیراعظم نے آج دوپہر اعلی سطح اجلاس بھی طلب کرلیا ہے۔ادھر برطانوی پولیس نے ہلاکتوں کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا ہے کہ دھماکا ارینا کے داخلی دروازے کے قریب ہوا، اس وقت کانسرٹ میں 20 ہزار سے زائد افراد موجود تھے بعدازاں جہاں پر بھگدڑ مچ گئی اور کئی افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

سعودیہ میں سلوک شرمندگی کا باعث, اہم شخصیت کا حیران کُن انکشاف

اسلام آباد(آئی این پی)پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ جس طرح پاکستان کے وزیر اعظم کے ساتھ سعودی عرب میں جس طرح سلوک کیا گیا وہ شرمندگی کا باعث ہے ‘ نواز شریف نے بڑی نیٹ پریکٹس کی لیکن بارہویں کھلاڑی بنا دئیے گئے ‘ ٹرمپ کے باتوںپر نواز شریف کو کوئی تو بیان دینا چاہیے تھا ‘ ٹرمپ نے بھارت کا نام لیا اور کشمیر کی بات نہیں کی ‘ ٹرمپ کو پاکستان یاد ہی نہیں آیا ‘ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں جس ملک کے 70 ہزار افراد شہید ہوئے اس کا نام تک نہیں لیا گیا ‘ نواز شریف کو بولنا چاہیے تھا کہ ہم ایران کو تنہاءنہیں کرنا چاہتے ‘ دوسروں کی جنگوں میں شرکت پاکستان کے مفاد میں نہیں ‘ پاکستان کا کام آگ بجھانا ہونا چاہیے تھا ‘ وزیر اعظم کو کہنا چاہیے تھا کہ ہم فریق نہیں ثالث بنیں گے ‘ جس طرح پاکستان کی خارجہ پالیسی ہے نواز شریف کو اس پر استعفیٰ دینا چاہیے ‘ سوشل میڈیا ایک انقلاب ہے ‘ آزادی اظہار پر پابندی غیر جمہوری ہے ‘ انصاف نہ ملا تو سڑکوں پر آئیں گے۔ پیر کو میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ خوش آئند ہے کہ عدالت نے کہا کہ تحقیقات 60 دن میں ہی ہو گی‘ سپریم کورٹ نے کہا کہ یہ کریمنل انوسٹی گیشن ہے ۔ عمران خان نے کہا کہ جس شخص کے خلاف کرمنل انوسٹی گیشن ہو وہ ملک کا وزیر اعظم ہے۔ امریکہ کے صدر کو پاکستانی وزیر اعظم سے ملنے کا خیال ہی نہیں آیا۔ جس طرح پاکستانی وزیر اعظم کو ٹریٹ کیا گیا وہ شرمندگی کا باعث ہے۔ ٹرمپ کی باتوں پر نواز شریف کو کوئی تو بیان دینا چاہیے تھا۔ نواز شریف پاکستان کے وزیر اعظم ہیں ۔ پاکستان کے لوگوں کی ہی بات کر لیتے۔ ٹرمپ کو تو پاکستان یاد ہی نہیں آیا ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کشمیری میں ریاستی دہشت گردی کر رہا ہے۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں جس ملک کے 70 ہزار افراد شہید ہوئے اس کا نام تک نہیں لیا گیا۔ ٹرمپ نے بھارت کا نام لیا اور کشمیر کی بات نہیں کی۔ ٹرمپ نے فلسطین کے عوامی نمائندوں کو دہشت گرد کہہ دیا۔ نواز شریف پاکستان کی نمائندگی کر رہے تھے تو انہیں بولنا چاہیے تھا کہ ہم ایران کو تنہا نہیں کرنا چاہتے۔ عمران خان نے کہا کہ ہمیں مسلمان دنیا کو اکٹھا کرنا چاہیے ہمیں فریق نہیں ثالث بننا چاہیے۔ دوسروں کی جنگ میں شرکت پاکستان کے مفاد میں نہیں ہے۔ پاکستان کا کام آگ بجھانا ہونا چاہیے۔ یہ سب باتیں نہیں کرنی تو سعود عرب جانا ہی نہیں چاہیے تھا۔ وزیر اعظم کو کہنا چاہیے تھا کہ ہم فریق نہیں ثالث بنیں گے۔ عمران خان نے کہاکہ نواز شریف کو کشمیر میں بھارتی مظالم کی بات کرنی چاہیے تھی۔کیونکہ ان کی کوئی عزت نہیں ہے ، عمران خان نے کہا کہ سعودی عرب میں 55ملکوں کی سمٹ میں وزیراعظم محمد نوازشریف کو تقریر کرنے کا موقع ہی نہیں دیاگیا، جن لوگوں کی اپنی کوئی عزت نہیں ہوتی انکی کوئی دوسرا بھی عزت نہیں کرتا ، جے آئی ٹی کی رپورٹ عام کرنے کے سوال پر عمران خان نے کہا کہ جے آئی ٹی کی رپورٹ سپریم کورٹ میں پیش ہونے کے بعد فیصلہ کرینگے کہ جے آئی ٹی کی رپورٹ منظر عام پر آنی چاہئے یا نہیں۔چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ پاکستان میں موجودہ دور حکومت میں سب سے کم سرمایہ کاری آئی ، وزیر اعظم کے بیرون دورے پر یومیہ 47لاکھ روپے خرچ آیا جو غریب عوام کے ٹیکس کا پیسہ ہے ۔حسن روحانی نے ایران کو دنیا کے ساتھ جوڑنے کی کوشش کی مگر ٹرمپ نے اسرائیل کے ہر دشمن کو دہشتگرد بنا دیا ۔ٹرمپ نے جو باتیں کی وہاں نوازشریف کو اس پر بیان تو دینا چاہئیے تھا ، ٹرمپ نے حماس اور حزب اللہ کو دہشتگرد بنا دیا ۔ آرمی چیف سے ملاقات میں جنرل (ر) راحیل شریف کے سعودی فوجی اتحاد میں شمولیت پر بات ہوئی جس پر انہوں نے کہا کہ راحیل شریف کا رول یہ ہو گا کہ مسلم دنیا میں انتشار نہ ہو اور انہیں اکٹھا کیا جائے ۔ایک سوال پر انکا کہنا تھاکہ امریکی جنگ میں پاکستان کا سو ارب کا نقصان ہو۔پاکستان نائن الیون واقعے میں ملوث نہیں ۔ٹرمپ نے فلسطین کے منتخب نمائندے کو دہشتگرد کہہ دیا ۔دہشگردی کیخلا ف پاکستان نے سب سے زیادہ قربانیاں دیں ۔نوازشریف کو ریاض میں پاکستان کی بات کرنی چاہئیے تھی اور ہمیں مسلم امہ کو متحد کرنے کی کوشش کرنی چاہئیے ۔سوشل میڈیا کے حوالے سے عمران خان نے کہا کہ سوشل میڈیا پر اظہار رائے کرنے والوں کو پکڑا جا رہا ہے ۔ اس بار الیکشن نیوٹرل ایمپائر کے ذریعے کرانے کی کوشش کریں گے اور ساری پارٹیوں کو ملانے کی کوشش کریں گے اور کہیں گے میچ سے پہلے رولز سیٹ کر لیں ۔